ہماری سازشِ پیہم میں دم نہیں ہوئے تو
جو "تورے” ہیں وہی "مورے بلم” نہیں ہوئے تو

معاشی طور پہ اول مقام پر ہیں وہی
معاشرت میں جو نمبر دہم نہیں ہوئے تو

ضعیف چشم ہے کیدو کا چشم دید گواہ
"ہمارے ہونے کا دہوکہ ہے، ہم نہیں ہوئے تو؟”

کریں گے کارِ کرپشن ہم اور کس کے لئے
ہمارے بخت میں خود کش شکم نہیں ہوئے تو

تم اُن کو خبری تو کہتے ہو نیوز چینل کے
پٹاخے اُن کے حسابوں میں بم نہیں ہوئے تو؟

سواد آنا نہیں عورتوں کو شاپنگ کا
بہائے اشیا اگر بیش و کم نہیں ہوئے تو

چلے گی کس طرح نقادِ نکتہ چیں کی دکاں
رقم نہ ملنے پہ مضموں رقم نہیں ہوئے تو

ہماری آگہی سے کرتے ہیں فلرٹ مگر
یہ ٹی وی ذات کے ہی جامِ جم نہیں ہوئے تو

بجا کہ ہم پہ بہت ملتفت ہے موٹو ارم
ہمارے خواب ہی بہرِ ارم نہیں ہوئے تو

Advertisements