چاہے لگی ہو کام سے یا ہو فراغ سے
رکھتی نہیں ہے شوق وہ ہرگز ایاغ سے
پیتی ہے ہر سمے
اس میں ہے جو بھی شے
کچھ بھی نہیں لذیذ میاں کے دماغ سے

Advertisements