خود میں کر آؤ گے جب تدوین میٹھی عید پر
انٹریسٹ میرا بھی ہو گا keen میٹھی عید پر

جب گلے ہم کو لگاتے ہیں چٹخ جاتے ہیں ہم
اُن کے آگے ہم ہیں "میڈ اِن چین” میٹھی عید پر

منہ اُٹھا کر آ گئے ملنے ملانے کے لئے
میرے گھر سسرال کا ہے سین میٹھی عید پر

خود کو افلاطون کس برتے پہ کہتے ہیں بھلا
وہ جو سر تا پا ہیں مسٹر بین میٹھی عید پر

زہد کی باتیں رہیں صیام کے اذکار تک
ڈال دی اب ہر کسی نے زین میٹھی عید پر

اہلِ ایماں نے وہ رنگ رلیاں منائیں ہیں کہ بس
نفسِ امارہ نے باندھا ٹین میٹھی عید پر

دیکھئے یہ شیر خرما، یہ سویاں یہ ڈیو
چھوڑئے پرہیز کی تلقین میٹھی عید پر

جن کے گھر جانا تھا میں نے وہ مرے گھر آ گئے
"مجھ سے بڑھ کر کون ہے مسکین میٹھی عید پر”

آ گیا سامانِ خورد و نوش دورانِ دعا
کہہ اُٹھے مہمان سب آمین میٹھی عید پر

بہہ گئے شیرینی میں شوگر کی پرواہ نہ رہی
شعر کیوں لکھتے بھلا نمکین میٹھی عید پر

بزمِ شعری میں نہ ڈھل جائے ہمارا گھر ظفر
آ گئے جو آپ سے دو تین میٹھی عید پر

Advertisements