نیکیوں کا بھی سلسلہ رکھنا
کھانے پینے کا در کھُلا رکھنا

سرفروشانہ اُس گلی جانا
بھاگنے کا بھی راستہ رکھنا

اُس کو اپنانا جیسے بن پائے
نام پھر اُس کا بھی بلا رکھنا

کبھی میک اپ بغیر بھی رہنا
اپنے شوہر کو بھی ڈرا رکھنا

لسے بندوں کے سر چڑھے جانا
زور والوں سے دُم دبا رکھنا

کوئی شکرا تو پھنس ہی جائے گا
سر پہ جوڑے کا گھونسلہ رکھنا

مولوی کو اگر بلایا ہے
بوٹیاں اور شوربہ رکھنا

یارماروں سے احتیاط کے ساتھ
"ملنے جُلنے کا حوصلہ رکھنا”

جو زمانے کو منہ چڑاتا ہے
اُس کے آگے بھی آئینہ رکھنا

تھکیاں بھی ضروری ہیں لیکن
ہاتھ گدی پہ بھی جما رکھنا

رن کو رن نہ بنانے دینا ظفر
خانگی میچ کو ڈرا رکھنا

Advertisements