زندگی بھر کی چبھن
تیرے لہجے کی شکن

خیر اہلِ شہر کی
بج رہے ہیں سائرن

دشت تک جائے مہک
جب کھِلے کوئی چمن

رات بھر للکار تھی
ایک ننھی سی کرن

کیسی تنہائی بچھی
انجمن در انجمن

وقت اور میں، جس طرح
برسرِ رن، تیغ زن

Advertisements