ملنے والوں کو سقیم الحال ہی لگنے لگے
کیا کریں مشکوک جب اعمال ہی لگنے لگے
مچھروں کو مارنے کے جوش میں
تالیاں پیٹی ہیں کتنی کیا کہیں
دوستوں کو ہم نرے قوال ہی لگنے لگے

Advertisements