میری زنانی اور ہے خوابوں کی رانی اور ہے
اور کثرتِ اولاد کی صورت کہانی اور ہے

اپنا تو ماٹو ہے یہی تُو جو نہیں تو وہ سہی
کہتے تھے سب جس کو حیاتِ جاودانی اور ہے

مجنوں یونہی لیلٰی کے پیچھے باؤلا ہوتا ہے کیوں
رشتہ تو اُس کے واسطے اک خاندانی اور ہے

ہنس ہنس کے باتیں اور ہی خاتون سے کرتے ہیں ہم
لیکن کوئی بہرِ کمندِ شامیانی اور ہے

چمٹی ہوئی ہے لوڈ شیڈنگ نام کی کوئی بلا
میرے لئے یہ ایک برقِ آسمانی اور ہے

اپنی نظر سے دیکھتا ہے ہر وقوعہ ہر کوئی
تیری زبانی اور ہے میری زبانی اور ہے

مرنے کا بتلاتا ہوں تو تم جھاڑتے ہو فلسفہ
نلکے کی باتیں مت کرو دیدوں کا پانی اور ہے

سگریٹ کے باعث ہو گئی یونہی غلط فہمی ذرا
انسان ہے جنسِ دِگر انجن دُخانی اور ہے

طعنہ زنی اور طنز میں جو فرق ہے وہ جان لیں
ہے ناوک اندازی جدا ور خوش بیانی اور ہے

Advertisements