کیوں بُلاتے ہو اِس ہفیائی ہوئی ٹولی میں
مجھ کو آرام سے سونے دو مری کھولی میں
زندگی کا یہ نظریہ ہے مرا
ساری مخلوق کا رازق ہے خُدا
آم پک جائیں تو خود آ کے گریں جھولی میں

Advertisements